وزیر اعظم کا اتحادیوں کے اعزاز میں ظہرانہ،مسلم لیگ ق اور بی این پی مینگل میں سے کوئی شریک نہ ہوا

حکومت اور اتحادیوں میں دوریاں بڑھنے لگیں ،،،،وزیراعظم عمران خان کی جانب سے اتحادی جماعتوں کے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانے میں مسلم لیگ ق اور بی این پی مینگل کی جانب سے کوئی شریک نہ ہوا۔
وزیراعظم کی جانب اتحادی جماعتوں کے اعزاز میں ظہرانہ ،دعوت کے باوجود مسلم لیگ ق کی جانب سے کوئی شریک نہ ہوا،بی این پی مینگل کی بھی عدم شرکت، ایم کیو ایم اور جی ڈی اے نے سندھ حکومت کے خلاف شکایات کے انبھار لگا دیئے ،وزیر اعظم کو بتایا کہ سندھ کے ہر محکمے میں صرف پیپلزپارٹی کا کنٹرول ہے، بیوروکریسی وفاق کے منصوبوں کو بھی پیپلزپارٹی کی مرضی سے چلا رہی ہے،سندھ حکومت کے عدم تعاون کی وجہ سے کراچی کے لوگوں متاثر ہورہے ہیں،وزیر اعظم نے اتحادیوں کو یقین دلایا کہ عوام کے مساَئل حل کرنے کے لیے میکانزم تیار کر لیا گیا ہے،جلد اچھے نتائج دیکھنے کوملیں گے،انکا کہنا تھا کہ جب حکومت ملی ملک ڈیفالٹ ہونے کے دہانے پر تھا،17 سال بعد کرنٹ اکاونٹ خسارہ مثبت ہوامعاشی ٹیم نے محنت کی اور ملکی معیشت کو استحکام ملا ہے۔ایم کیو ایم کی نمائندگی سید امین الحق اور خالد مقبول صدیقی نے کی جی ڈی اے سے پیر پگاڑا، فہمیدا مرزاجمہوری وطن پارٹی کے شاہ زین بگٹی اورعوامی مسلم لیگ کئ سربراہ شیخ رشید احمد شریک ہوئے،،دوسری جانب ق لیگ کے رہنما چوہدری مونس الہیٰ نے اپنے ٹویٹ کہا کہ ہمارے معاہدے میں عمران خان کے کھانے کھانا شامل نہیں،،ہمارا اتحاد صرف ووٹ کی حد تک ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں