شہری 10 گرام تک چرس پینے کی اجازت کے لئے سندھ ہائی کورٹ پہنچ گیا

شہری 10 گرام تک چرس پینے کی اجازت کے لئے سندھ ہائی کورٹ پہنچ گیا،وزارت قانون وفاق و دیگر کو فریق بناتے ہوئے درخواست دائر کردی،عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کردی
مہنگائی، حق تلفی اور انصاف کےلئے تو عدالت سے رجوع کرنا سنا اور دیکھا تھا ،لیکن عدالتی تاریخ کا انوکھا کیس سامنے آگیا،شہری 10 گرام تک چرس پینے کی اجازت کے لئے سندھ ہائی کورٹ پہنچ گیا،وزارت قانون وفاق و دیگر کو فریق بناتے ہوئے درخواست دائر کردی،عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کردی،10 گرام چرس پینے کی اجازت کےلئے شہری عدالت پہنچ گیا،درخواست میں وزارت قانون وفاق و دیگر کو فریق بنایا گیا، درخواست گزار غلام اصغر سائیں کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا ،کہ وہ غریب آدمی ہے، مفاد عامہ کی درخواست لیکر آیا ہے، 10 گرام چرس رکھنے پر جرمانہ بھی ختم کیا جائے، عدالت کا درخواست پر برہمی کا اظہار ،عدالت نے ریمارکس میں کہا کیا آپ چاہتے ہیں ملک میں سب لوگ چرس پینا شروع کر دیں؟ بتائیں آپ پر کتنا جرمانہ عائد کی کیا جائے،
درخواست گزار کا کہنا تھا کہ چرس پینے کی اجازت دینے سے ملک کی آمدنی بڑھے گی، ریونیو بنے گا،،،عدالت نے ریمارکس میں کہا کہ نہیں چاہئیے ایسا ریونیو، آمدنی بڑھانے کے اور بھی جائز طریقے ہوتے ہیں ،،عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کردی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں