کرتارپور راہداری کو ایک سال مکمل

حکومت پاکستان کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیےشکرگڑھ میں سیمینار کا انعقاد ہوا، سول وعسکری شخصیات اور عوام نے بھرپور شرکت کی،،،دوسری جانب ہندوتوا کے پرچار نام نہاد سکیولر ملک بھارت کی روایتی ہٹ دھرمی برقرار ہے،،،دنیا کے سب سے بڑے جمہوریت کے دعویدار بھارت کے سیکولرازم کا بھانڈا پھوٹ گیا ،،،،بھارت نےسکھوں کو کرتارپور میں بابا گرونانک کی جنم دن کی تقریبات میں شرکت سے روک دیا،،دفتر خارجہ کے ترجمان زاہد حفیظ چوہدری نے بیان میں کہا پاکستان نے کرتار پور راہداری کروناایس او پیز کے تحت کھول دی،،،بھارت ابھی تک سکھوں کو کرتارپور آنے سے روک رہا ہے
یاد رہے گزشتہ سال 9 نومبر کو وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے سکھوں کے روحانی پیشوا بابا گورو نانک کے یوم پیدائش کے موقع پر کرتارپور راہداری کا افتتاح کیا گیا تھا۔ تحصیل شکر گڑھ میں واقع گوردوارہ صاحب کے قریب کرتارپور کوریڈور کے سنگ بنیاد کی تقریب میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، سابقہ بھارتی وزیراعظم من موہن سنگھ،بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ، بھارتی کرکٹر و سیاستدان نوجوت سنگھ سدھو، بھارت کی نمائندگی وزیر خوراک ہرسمرت کور اور وزیر تعمیرات ہردیپ سنگھ سمیت مختلف ممالک کے سفارتکاروں، عالمی مبصرین اور سکھ برادری کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں