وزیر اعظم عمران خان ایک بیماری،جو ماسک پہننے سے نہیں جائے گی ،اٹھا کر باہر پھینکنا ہوگا،مریم نواز

مریم نواز نے گوپس اور غذر میں انتخابی جلسوں کے دوران حکومت پر تنقید کے خوب تیر برسائے ،، مسلم لیگ ن کی نائب صدرنے وزیراعظم عمران خان کو پاکستان کو لاحق ایک بیماری قرار دیدیا ،،کہتی ہیں یہ بیماری ماسک پہننے سے نہیں جائے گی ،،اٹھا کر باہر پھینکنا پڑے گا ،دنیا کو معلوم ہوگیا ہے گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ن حکومت بنانے جا رہی ہے،
نگر میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ (ن) لیگ گلگت بلتستان میں حکومت بنانے جارہی ہے، چوتھی مرتبہ نہ صرف گلگت میں بلکہ پاکستان میں (ن) لیگ اور نوازشریف کا سورج طلوع ہونے جا رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ انتخابات میں دھاندلی کی گئی تو عوام آپ کا گھیراؤ کرے گی، دھاندلی کا فیصلہ نا مسلم لیگ (ن) مانے گی نا گلگت بلتستان کے عوام مانیں گے، مہنگائی نے گھر اجاڑ دیے آپ کہتے ہیں گھبرانا نہیں۔
مریم نواز کا کہنا تھا کہ بدزبانوں کو امریکا میں اٹھاکر باہر پھینک دیا گیا، پاکستان میں بھی بدزبانوں کو اٹھا کر باہر پھینکیں گے، سلیکٹڈ ریجیکٹڈ ہوا، اب یہ جا رہا ہے اور عوام کے الیکٹڈ آرہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پی پی سے ہمارا مقابلہ ہے لیکن بلاول پر ذاتی حملے برداشت نہیں
گلگت بلتستان کے علاقے گوپس میں مسلم لیگ (ن) کی نائب صدرمریم نوازنے جلسے سے خطاب میں کہا کہ یہ اجتماع بتارہا ہے گلگت بلتستان میں شیرآئے گا کیونکہ اس حکومت کو کبھی حکومت نہیں سمجھا، یہ جعلی حکومت ہے جس کے نصیب میں عوام کی عزت کرنا لکھا ہی نہیں، اس سے درخواست کرنے کا کیا فائدہ، اگرآپ کوآپ کا حق نہیں دیا جارہا توآنے والے الیکشن میں شیرکوووٹ دواوراپنے حقوق کے ساتھ جیو۔
مریم نواز نے کہا کہ اس وادی کو دیکھ کرجنت کا خیال آتا ہے لیکن جعلی حکومت گوپس کے فنڈزروک کر بیٹھی ہے۔ دیامراوربھاشاڈیم پر نوازشریف نے جو کام کیا آج تک کسی نے نہیں کیا، پتا چلا ہے وہاں جو نوکریاں نکلی ہیں اس میں یہاں کے عوام کو حصہ اور معاوضہ نہیں دیا جا رہا، ن لیگی ارکان یہ معاملہ پارلیمان میں اٹھائیں گے اور میں بھی دیامربھاشاڈیم کے متاثرین کیلئے آوازاٹھاؤں گی۔ عوام کے مسائل کا واحد حل مسلم لیگ ن ہے۔
مریم نوازنے کہا کہ نوازشریف نے پہلے ہی کہہ دیا تھا لڑائی تم سے نہیں ہے، عمران خان کا نام لیتے ہوئے تکلیف ہوتی ہے، اس کا نام بھی لینا گوارا نہیں کرتی، لیکن مجبورا عوام کے مجرم عمران خان کا نام لینا پڑتا ہے، وہ چھوٹا آدمی ہے لیکن جب علاج مقصود ہو توبیماری کا نام لینا پڑتا ہے، پاکستان کو آج جو بیماری لاحق ہے اس کا نام ہے عمران خان اور پاکستان تحریک انصاف جو جوڑ توڑ کر بنائی گئی ہے، ملک میں کورونا جیسی یہ بیماری 2018ء میں ہی آگئی تھی، یہ بیماری ماسک پہننے سے نہیں جائے گی بلکہ اسے اٹھا کر باہر پھینکنے سے ہی جائے گی، کیونکہ اس بیماری نے ملکی اداروں کی جڑوں، معیشت، اخلاق اور وفاق کی اکائیوں کو کھوکھلا کردیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں