15 نومبر کے بعد گلگت بلتستان کو وزیراعلیٰ دے کر واپس جاؤں گا،بلاول بھٹو

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو گلگت بلتستان کے الیکشن میں اپنی جماعت کی کامیابی کیلئے پر امید،،کہتے ہیں ،، 15نومبر تک گلگت بلتستان میں ہی رہوں گا،وزیراعظم پر تنقید کرتے ہوئے کہا ،،عمران خان کو اجازت نہیں دیں گے وہ سی پیک کو اپنے مفاد کیلئے استعمال کرے،،سی پیک کا جو فائدہ گلگت بلتستان کے عوام کو پہلے ملنا چاہئے تھا انہیں نہیں ملا،پیپلز پارٹی حکومت کے ان اوچھے ہتھکنڈوں کیخلاف آواز بلند کرتی رہے گی
گلگت کے ضلع غذر کی تحصیل یاسین میں بھی کارنر میٹنگ سے خطاب میں بلاول کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کی وجہ سے سی پیک منصوبہ پاکستان میں آسکا، سی پیک کو گیم چینجر بولنے والے اصل میں کچھ جانتے ہی نہیں، سی پیک کا اصل اور پہلا فائدہ تو گلگت بلتستان والوں کا ہونا چاہیے تھا، بلاول نے وزیراعظم کے دورہ گلگت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سلیکٹڈ وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان میں انتخابات کی وجہ سے کسی پیکج کا اعلان نہیں کررہا، وزیراعظم سے پوچھنا چاہیے کہ پچھلے دو سال سے یہ حکومت میں ہیں، تب تو انتخابات نہیں تھے، ان دوسالوں میں آپ نے کیا کیا؟ کس کو پیکج دیا؟ پی پی چیئرمین کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم نے کہا کہ سوچتا ہوں کہ گلگت بلتستان والوں کو صوبہ دے دوں، وزیراعظم الگ صوبے کی بات کو اپنے منشور میں شامل کرکے دکھائیں، جنوبی پنجاب والوں کو بھی 100 دن میں الگ صوبہ دینےکا وعدہ کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں